بسم اللہ الرحمن الرحیم،الحمد للہ والصلوٰۃ والسلام علی من لا نبی بعدہ 
منگل, 22 جنوری 2013 15:44

بریلوی مکتب فکر کے علما کی نظر میں

Written by 

(۶)مولانا عبد السمیع رامپوری بریلوی فرماتے ہیں یہ سامان فرحت و سرور اور وہ بھی مخصوص مہینے ربیع الاول کے ساتھ اور خاص وہی بارہواں دن میلاد شریف کا متعین بعد میں ہوا ۔ یعنی چھٹی صدی کے آخر میں۔ (انوار ساطعہ ،ص159)

(۷) مولانا احمد یار نعیمی بریلوی فرماتے ہیں :اس (میلاد ) کو تین زمانوںمیں سے کسی نے نہیں کیا ،بعد میں ایجاد ہواہے ۔(جاء الحق 236/1)

(۸)مولانا غلام رسول سعیدی بریلوی فرماتے ہیں: سلف صالحین یعنی صحابہ کرام رضی اللہ عنہم اور تابعین رحمہ اللہ نے محافل میلاد نہیں منعقد کیں ،بجا ہے ۔صحابہ رضی اللہ عنہم اور تابعین رحمہم اللہ کے محافل میلاد منعقد نہ کرنے کی ایک وجہ یہ بھی ہو سکتی ہے کہ وہ دن رات دین کے زیادہ اہم کاموں میں مشغول رہتے تھے۔ (شرح صحیح مسلم 179/3)

(۹) مولانا مفتی محمد حسین نعیمی فرماتے ہیں :عاشوراء اور ربیع الاول کے جلسے جلوس یادگاروں کے سلسلے میں نکالے جاتے ہیں ۔ یہ مذہبی نقطہ نظر سے نہ فرض ہے نہ واجب ۔ ایسے جلسے جلوس دنیا کے دیگر اسلامی ممالک میں نہیں نکالے جاتے کیونکہ یہ دین کا حصہ نہیں۔ (روزنامہ جنگ لاہور 13اکتوبر 1984)

Read 2206 times Last modified on ہفتہ, 10 دسمبر 2016 17:21