بسم اللہ الرحمن الرحیم،الحمد للہ والصلوٰۃ والسلام علی من لا نبی بعدہ 

بدھ, 20 دسمبر 2017 04:58

دینی معاملات میں دلیل اور ثبوت کی اھمیت کتنی ہے؟

مصنف/مقرر 

دینی معاملات میں دلیل اور ثبوت کی اھمیت کتنی ہے؟

دنیاوی معاملات میں ہمیشہ اس فن کے ماہرین کی رائے اور ان کے تجربے کو سامنے رکھ کر فیصلہ کیا جاتا ھے جبکہ دینی معاملات میں زیادہ تر لوگ آنکھیں بند کرکے عمل کرتے ہیں۔ جبکہ دینی معاملات میں چھان بین اور دلائل و ثبوت کی اہمیت ھونی چاہئے۔ نیز دینی معاملات میں دلائل و ثبوت اہمیت رکھتے ہیں یا صرف بزرگوں کی باتیں؟

 

 

deeni-muamlat-me-daleel-aur-saboot-ki-ahmiyat-kitni-he?

Shaikh Abdullah Nasir Rahmani

Read 117 times
More in this category: « استقامت
  • Image
  • Text
  • Additional info
  • Author

دینی معاملات میں دلیل اور ثبوت کی اھمیت کتنی ہے؟

دنیاوی معاملات میں ہمیشہ اس فن کے ماہرین کی رائے اور ان کے تجربے کو سامنے رکھ کر فیصلہ کیا جاتا ھے جبکہ دینی معاملات میں زیادہ تر لوگ آنکھیں بند کرکے عمل کرتے ہیں۔ جبکہ دینی معاملات میں چھان بین اور دلائل و ثبوت کی اہمیت ھونی چاہئے۔ نیز دینی معاملات میں دلائل و ثبوت اہمیت رکھتے ہیں یا صرف بزرگوں کی باتیں؟

 

 

deeni-muamlat-me-daleel-aur-saboot-ki-ahmiyat-kitni-he?

Shaikh Abdullah Nasir Rahmani